پاول اوٹلیٹ سرخیل اول انفارمیشن مینجمنٹ


Paul Otlet

پاول اوٹلیٹ (تصویر) ١٨٦٨ میں، برسلز، بیلجیم میں پیدا ہوا تھا. ان کی یادگار کتاب " ٹریٹی ڈی ڈاکومنٹیشن(اشاعت برسلز ١٩٣٤) " (معاہدہ دستاویزات ) تھی

جو انفارمیشن سائنس میں ترقی کے لیے بنیادی مرکزی اور علامتی دونوں حیثیت میں تھی جسے بیسویں صدی کے پہلے نصف حصے میں "دستاویزات" ڈاکومنٹیشن کہا جاتا رہا. اس کے علاوہ یہ کتاب ہمیں اس بات کی یاد دلاتی ہے کہ جو بہت زیادہ وسیع پیمانے پر ھم بھول گئے ہیں کہ اس ہی میدان میں بیسویں صدی کے ابتدائی دہائیوں میں ایک تخفیفی نظریہ اور انفارمیشن ٹیکنالوجی موجود ہے جو اب عام طور پر لوگوں کو حیران کرتا ہے۔

دستاویزات (ڈاکومنٹیشن ) کی ترقی میں پال اوٹیلٹ کا سب سے زیادہ اہم بنیادی کردار تھا. انہوں نے معاشرے کے ایک اہم مرکزی مسئلہ کے لیے کئی دہائیوں (عشروں) مرکزیتکنیکی، نظریاتی اور تنظیمی پہلوؤں کے ساتھ بے حد جدوجہد کی۔ کہ کیسے ان لوگوں کو (ریکارڈ) محفوظ شدہ معلومات کی دستیابی ھوپائے جنھیں اس کی ضرورت ھے ۔اس پر انہوں نے گہرائی سے سوچا اور انھوں نےاپنے انسٹی ٹیوٹ برسلز میں رہتے ہوئے اس پر بے حد لکھا انھوں نے اسکا نقشہ ڈیزائن کیا اسے تخلیقی تیار کیا اور ابتدائی بلند اوراسکا ممکنہ ُپرعزم حل پیش کیا۔

اپنی زندگی میں ہی انھوں نے اپنے تخلیقی کام کے خلاصے کو دو بڑی کتابوں میں مجتمع کیا ۔ ٹریٹی ڈی ڈاکومنٹیشن اشاعت ١٩٣٤ موندے ا یسا ئی دی ینورز لیم اشاعت ١٩٣٤

حالیہ برسوں میں اوٹلیٹ کے کام میں ایک نئی تجدیدی دلچسپی پیدا ہوئی ہے. ١٩٣٤ میں ٹریٹی ڈی ڈاکومنٹیشن ایک لمبے عرصے بعد دوبارہ شائع کیا گیا. ١٩٩٠ ء میں ان کے بائیوگرافر پروفیسر ڈبلیوبویلڈ ریویلڈ (یونیورسٹی آف نیو ساوتھ ویلز )نے ان کے مضامین سے منتخب کردہ تحریروں کے بہترین انتخاب اوٹیلٹ، پال. بین الاقوامی تنظیم اور علم کی تقسیم: (٦٨٤ فٹ). ایمسٹرڈیم: ایلسیویئر، ١٩٩٠. کے ایک انگریزی ترجمہ کو شائع کیا۔

انفارمیشن سائنس میں اوٹلیٹ کے نظریات اور تحریرات ایک بار پھر سے بنیادی موثر جُز ہیں ، تاریخی دلچسپی کے ساتھ مزید انفارمیشن سائنس کے تعلقات میں بطور معاصر دلچسپی کی حامل ہیں۔ مثال کے طور پر دستاویزات اور ہائپر ٹیکسٹ کی نوعیت انفارمیشن سائنس میں ایک فعال اجزاء ہیں یہ اعلی پروگرام تقریبا ایک صدی قبل اوٹلیٹ اور لا فونٹین نے شروع کیا جو بین الاقوامی فیڈریشن برائے انفارمیشن اینڈ ڈاکومنٹیشن ( ایف آئی ڈی) کے طور پر ابھی بھی جاری ہے۔ پاول اوٹلیٹ لا فونٹین یونین آف انٹرنیشنل ایسوسی ایشن کے بانی کے طورپر بھی فعال تھے۔

:ماخذ

اوٹلیٹ کے بارے میں منتخب تحریریں ، انکا کام اور انکی کامیابیاں

اوٹلیٹ کے آرکائیو روی دس پیسج ١٥،ب -٧٠٠٠مونس بیلجیم، کے میوزیم میں اب دوبارہ سے دستیاب ھیں۔ جیسےکے دی مونڈانیم کو دیکھا جاسکتا ھے جس میں تحقیقی بنیادوں پر آرکائیو کو شائع کرنا شروع کردیا ھے ۔

خاص طور پر جیسے کہ بائبل کے بین الاقوامی بیورو کے سو سال: ١٩٨٥ -١٩٩٥؛ لیس پرمسس دی مونڈانیم مونس - اشاعت مونڈانیم ١٩٩٥.آئی ایس بی ٢- ٩٣٠٠٧١-٠٥-٢ جرمن میں جا ئز ہ

ھائپر اوٹلیٹ پروجیکٹ اور کریٹیکل ڈیجیٹل ایڈیشن ٹریٹی ڈی ڈاکومنٹیشن.
ایلیکس رائٹ ، عالم دنیا کی درجہ بندی پاول اوٹلیٹ اور معلوماتی دور کی ابتدا، اوکسفورڈ یونیورسٹی پریس ٢٠١٤ اشاعت خاص اوٹلیٹ بین الاقوامی ایسوسی ایشن ٢٠٠٣ نمبر ٢-١ پی ڈی ایف فریکوئینسی لوی: وہ آدمی جو دنیا کی درجہ بندی کرنا چاہتا تھا بائیو گرافی اور ڈاکومینٹری فلم

رےوارڈز، جن کی بائیو گرافی اب اس لنک پرآن لائن دستیاب ھے
http://hdl.handle .net/1854/3989
ڈاکومنٹری : بی رے وارڈ (انگریزی زبان میں ) اور ایف فیوج ( فرانسیسی زبان میں) آ ل کینئس ون دی ویریلڈ (نورڈر لیچت ,٩) اس لنک پر دستیاب ھے
http://archive.org/details /paulotlet
ایک تنقیدی تبصرہ فرانس کی جانب سے: جب امریکہ نے پاول اوٹلیٹ کودریافت کرلیا۔

ترجمہ بحوالہ
http:// people.ischool.berkeley.edu/~buckland/otlet.html